پرویز خٹک | Pakistan Tehreek-e-Insaf
وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا

پرویز خٹک 1 جنوری 1950 کو ایک جانے پہچانے سرکاری ٹھیکے دار ہستام خان کے گھر  پیدا ہوئے ،  ان کی جائے پیدائش گاؤں منکی شریف ضلع نوشہرہ ہے ، پرویز خٹک نے اپنی ابتدائی تعلیم ایچی سن سے حاصل کی ،اس کے بعد پرویز خٹک گورڈن کالج راولپنڈی چلے گئے جہاں سے انہوں نے گریجوایشن کی اور پاکستان  پیپلز پارٹی کے ورکر کے طور پر بھی کام کیا ، پرویز خٹک ایک پاکستانی سیاستدان جو اس وقت خیبر پختونخوا کے وزیراعلیٰ کے طور پر خدمات سر انجام دے رہے ہیں ، انہوں نے ایک مرتبہ وزیر برائے ایری گیشن اور دو مرتبہ وزیر برائے صنعت و مزدوری بھی اپنی خدمات سر انجام دی ہیں انہوں نے بطور سیکٹری جنرل تحریک انصاف اپنا عہدہ جہانگیر ترین کو منتقل کردیا تھا 

پرویز خٹک پاکستان کے سیاسی نظام میں اصلاحات لانے کے عزم کے حوالے سے پہچانے جاتے ہیں ,انہوں نے اپنی ہی حکومت کے احستاب کو پہلی ترجیح دی , سکولوں میں بچوں کے داخل ہونے کی تعداد بڑھائی ، اداروں میں اصلاحات لے کر آئے ، سکیورٹی کے شعبے کو بہتر کیا اور پولیو کے خلاف بھرپور مہم چلائی اور اب انفرا سٹرکچر کو بہتر کرنا اور  سفری نظام بنانا ان کا منصوبہ ہے ، پرویز خٹک نے مقامی معیشت کو بہتر کرنے کیلئے علاقائی سیاحت کو بہتر کرنے کی منصوبہ بندی کی . جبکہ مستقبل کیلئے ان کا معیشت کیلئے منصوبہ یہ ہے کہ صوبے میں صنعت کو فروغ دیا جائے 

پرویز خٹک سختی سے ڈرون حملوں کی مخالفت کرتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ اس سے دہشتگردی میں اضافہ ہوتا ہے . پرویز خٹک نے خبردار کیا کہ اگر ڈرون حملے بند نہ ہوئے تو نیٹو سپلائی بند کی جا سکتی ہے 

پرویز خٹک کے تین بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں ، ان کا سب سے بڑا بیٹا اسحاق خٹک اپنی گریجوایشن مکمل کرنے کے بعد اس کمپنی کی دیکھ بھال کر رہا ہے جو ان کے دادا نے قیام پاکستان سے پہلے بنائی ، ان کے دوسرے دو بیٹے ابراہیم خٹک اور اسماعیل خٹک برطانیہ میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں