پہلے والے آزما چکے ہم اب اس کو بھی آخر تک آزمانا ہے | Pakistan Tehreek-e-Insaf
azmana-insaf-blog

 

ایک لڑکا پولیس والے کے پاس دوڑتا ہوا آیا اور دور سے ہی کہنے لگا ۔ سر جی ساتھ والی گلی میں میرے ابو جی کو ایک شخص مار رہا ہے ،
پولیس والا فوری ساتھ گیا دونوں کو چھڑوایا ۔ تھوڑی تفتیش سے پتا چلا کہ لڑائی تو کافی دیر سے ہورہی تھی ،
تب ذرا رعب سے لڑکے کو بولا ۔ ابے تو پہلے کیوں نہیں آیا تھا میرے پاس ؟
سرجی وہ بات دراصل یہ ہے کہ پہلے میرے ابو جی اسے مار رہے تھے ، لڑکے نے جھجھکتے جھجھکتے جواب دیا ،
۔
تو بات دراصل یہ ہے کہ ملک میں لوڈ شیڈنگ پہلے بھی تھی ، پٹرول پہلے بھی مہنگا ہوتا ، روپے کی قدر پہلے بھی کم ہوتی رہی ، ڈالر نے ساٹھ سے نوے اور نوے سے ایک سو بیس پر اڑان بھری ،
گردشی قرضے زیرو سے تیرہ سو ارب تک گئے ،
ہر پاکستانی سوا لاکھ کا مقروض ہوگیا ، قرضے چھ ہزار ارب سے تیس ہزار ارب تک پہنچ گئے ، تجارتی خسارہ بیس ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا ، اسٹیل مل ، پی آئ اے ریلوے ہماری آنکھوں کے سامنے منافع بخش اداروں سے سفید ہاتھی بن گئے ، گوادر پورٹ ، موٹروے اور نہ جانے کیا کیا گروی رکھ دیا گیا۔
انڈر میٹرک / جعلی سند یافتہ پائلٹس بھرتی کرلیے گئے ، رینٹل پاور کرپشن میں تحقیق کرنے والا نوجوان آفیسر اپنے کمرے میں پنکھے سے لٹکتا ملا ،ٹین پرسنٹ کی داشتہ کے پرس سے منی لانڈرنگ کی رقم برآمد کروانے والے ایماندار انسپکٹر کو اسکے گھر میں نامعلوم حملہ آور قتل کرگئے ، ماڈل ٹائون کو کون بھولا ہوگا ؟
پاکستان تمام مثبت و فلاحی انڈیکیٹرز میں آخری نمبروں پر چلا گیا
ہمارا صدر کسی حکمران سے ہاتھ ملاتا تو اس ملک کے اخبارات میں سرخی لگتی "پرائم منسٹر ہاتھ ملانے کے بعد اپنی انگلیاں لازمی گن لینی تھیں"
پانامہ لیکس آئ تو عالمی اخبارات میں ہمارے حکمرانوں کو بحری قزاق لکھا گیا ، سیٹنگ پرائم منسٹر امریکی ائیرپورٹس پر کپڑے اتراواتا پایا گیا ، کونسا قابل شرم واقعہ چشم فلک نے ماضی میں نا دیکھا ہو ؟
اب چھوٹی چھوٹی بات پر غیرت دکھا کر واویلہ مچانے والے پہلے کسی نے چیختے دیکھے ؟
امام سیاست کبھی اتنا بے چین نظر آیا ؟
اب حکمرانوں کی نشست و برخاست بولنے و کھانے تک پر عقابی نظریں رکھنے والے پہلے ستر سال تک بھنگ پی کر کیوں سوئے رہے ؟
وجہ ؟
صرف وہی اوپر بیان کردہ "معصوم لڑکے" والی کہ عمران خان سے پہلے۔۔۔۔۔

پرفیکٹ کوئی لیڈر نہیں ہوتا۔
پہلے والے آزما چکے ہم
اب اس کو بھی آخر تک آزمانا ہے۔کیا پتہ ملک کو سہی سمت لے ہی جائے یہ حکومت ابھی تھوڑا انتظار کرتے ہیں۔