CM KPK chairing Meeting about establishment of Special Force for security of CPEC,Non CPEC Investors

Friday, 14 April 2017 07:54 | READ 211 TIMES Written by 
RATE THIS ITEM
(0 votes)

With the compliments of Press Secretary to Chief Minister KP Peshawar

HANDOUT NO. 1 /PESHAWAR/DT: 12-4-2017

Chief Minister Khyber Pakhtunkhwa Pervez Khattak has approved the special security force for the CPEC and non CPEC projects including security cover to all the foreign investors in the province. The security cover would be extended to escort all the investors during the mobility, travelling and the destination etc. The special security force would comprise 4200 personnel including dedicated, temporary and need basis. He emphasized for close coordination with the security division of Pak Army in this regard. The Chief Minister directed to set up cells in the home, IGP office and DIGs in all regions of the province.
He was presiding over a meeting finalizing arrangements for the establishment of a separate force for dedicated security cover to CPEC and non CPEC projects, the security of industrial zones and all the foreign investors in the province. Attended by Advisor to Chief Minister on P&D Mian Khaliqur Rahman, Chief Secretary Abid Saeed, Secretary Home Shakeel Qadir, IGP Salahuddin, Principal Secretary to CM Muhammad Israr, Secretary P&D Shahab Ali Shah, Secretary Finance Ali Raza Bhutta and others, the meeting debated the mode of security for permanent security, short term and long term arrangements and made a number of decisions in this regard. The Chief Minister formally approved the establishment of a security force for the CPEC and non CPEC projects and security to all the foreign investors landing in Khyber Pakhtunkhwa for investment. He tasked the Secretary Home and IGP to sit together and finalize all the prerequisite required for the establishment of a security force.
The Chief Minister also directed to firm up all the cost supported by cogent reasons and he assured to clear it within no time. He directed that the new force should be organized at the pattern of Rapid Response Force and the force should have a rapid response strategy. The new force would have a linkage with the regular police force and there should be a clear vision for the deployment of the force at all districts. The force would provide security to the investors, industrial zones of the province and need driven security throughout the province. The Chief Minister directed the IGP and Secretary Home to come up with the clear strategy for the raising, rationalization and filling the vacant posts and the relocation of different personnel for induction into the new force. The provincial government, he assured would provide resources for force multipliers and necessary equipments for the new force. The provincial government would give a sketch of the security paradigm in the incoming road-show in Beijing where the provincial government would market its different projects to the foreign investors, he concluded.
=========

بہ تسلیمات پریس سیکرٹری برائے وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا
ہینڈ آوٹ نمبر۔1۔پشاور۔12 اپریل2017 ء
خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے صوبے میں سی پیک اور نا ن سی پیک تمام منصوبوں کیلئے خصوصی سیکورٹی فورس کے قیام کی منظوری دی ہے جس میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کیلئے حفاظتی انتظامات شامل ہیں۔ یہ سکیورٹی صنعتی تنصیبات کے علاوہ سرمایہ کاروں کی سفری سرگرمیوں کے دوران حفاظت کیلئے بھی یقینی بنائی جائے گی ۔سپیشل سکیورٹی فورس 4200 جوانوں پر مشتمل ہو گی جن میں اعلیٰ تربیت یافتہ تمام مستقل و عارضی اہلکار شامل ہوں گے ۔انہوں نے اس ضمن میں پاک فوج کے سیکورٹی ڈویژن کے ساتھ قریبی رابطے کو یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے ۔وزیراعلیٰ نے اس مقصد کیلئے محکمہ داخلہ اور پولیس ہیڈکوار ٹر کے علاوہ صوبے کے تمام ریجنز میں خصوصی سیل قائم کرنے کی ہدایت بھی کی ہے ۔ وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں اس حوالے سے خصوصی اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔اجلاس میں وزیراعلیٰ کے مشیر برائے منصوبہ بندی وترقیات میاں خلیق الرحمن، چیف سیکرٹری عابد سعید، سیکرٹری داخلہ شکیل قادر ، آئی جی پولیس صلاح الدین ، وزیراعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری محمد اسرار ، سیکرٹری منصوبہ بندی و ترقیات شہاب علی شاہ،سیکرٹری خزانہ علی رضا بھٹہ اور دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی ۔ اجلاس میں اس مقصد کیلئے سیکورٹی انتظامات کو مستقل ، طویل اور مختصر مدت کی منصوبہ بندی اور طریقہ کار کے تحت نمٹانے کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور کئی فیصلے کئے گئے ۔پرویز خٹک نے سیکرٹری داخلہ اور آئی جی پولیس کو ہدایت کی کہ وہ باہمی صلاح مشورے سے اس خصوصی سیکورٹی فورس کے قیام کیلئے درکار ضروریات کو حتمی شکل دیں اور ان کی روشنی میں معاملات کو بروقت نمٹائیں انہوں نے مزید ہدایت کی کہ فورس کے قیام کیلئے درکار وسائل کا واضح تعین کریں اور یقین دلایا کہ ان کی فوری فراہمی یقینی بنائی جائے گی ۔انہوں نے ہدایت کی کہ اس نئی فورس کو پولیس کے ریپیڈ ریسپانس فورس کی طرز پر منظم کیا جائے تاکہ کسی بھی ناگہانی صورتحال میں فوری حکمت عملی اور کاروائی کے قابل بنے ۔نئی فورس کا رابطہ ریگولر پولیس فورس سے براہ راست ہو گاجبکہ تمام اضلا ع میں اس کی تعیناتی ایک واضح ویژن کے تحت یقینی بنائی جائے گی ۔فورس ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں ، صنعتی بستیوں اور ضرورت کے مطابق صوبے میں کہیں بھی سیکورٹی کی ذمہ داریوں کیلئے تعینات کی جا سکے گی ۔ وزیراعلیٰ نے سیکرٹری داخلہ اور آئی جی پولیس کو ہدایت کی کہ وہ فورس کیلئے جوانوں کی بھرتی اور خالی آسامیوں پر تعیناتی کے علاوہ ٹیکنکل بنیاد پر دوسرے شعبوں سے اہلکاروں کی شمولیت کی واضح حکمت عملی وضع کریں۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت فورس کیلئے درکار وسائل اور سازو سامان کی فوری فراہمی یقینی بنائے گی ۔انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت بیجنگ میں اگلے ہفتے منعقدہ روڈ شو کے دوران سیکورٹی پلان کا خاکہ بھی پیش کرے گا تاکہ صوبے میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کرنے والے غیر ملکی سرمایہ کاروں کوپر کشش ترغیبات کے علاوہ شخصی اور سرمائے کی سیکورٹی کا بھر پور احساس دلایا جا سکے ۔
<><><><><><><>

12-apr12-4-2017  CM Urdu - 1

12-apr12-4-2017 CM Photo chairing meeting about establishment of Special Force for security of CPECNon CPEC investors