CM KPK Chairing Meeting with FWO and briefing about Schools Standardization

Friday, 17 March 2017 18:44 | READ 52 TIMES Written by 
RATE THIS ITEM
(0 votes)

With the compliments of Press Secretary to Chief Minister KP Peshawar

Handout No.1 Peshawar 16th March 2016

Chief Minister Khyber Pakhtunkhwa Pervez Khattak has directed the relevant quarters to finalize the agreements with the authorities of Frontier Works Organization (FWO) for the construction of three mega hydropower, cement and housing projects in the Khyber Pakhtunkhwa.
The agreements are likely to be inked by the coming Monday with proper timeline, he issued these directives while chairing a high level meeting here on Thursday. There should be no hurdles in the execution of public welfare projects he told the meeting.
The Chief Minister directed the participants of the meeting to take all possible measures for starting construction works on the projects in time as the KP government would not tolerate any negligence and lethargy to this effect.
Future of the KP is bright as the huge investment was being poured in the province with each passing day, he said adding, pace of industrialization has been geared up that would help create massive employment opportunities for the jobless in the province.
The interests of the people must be kept in mind while preparing designs for the housing projects as people were the focal points of all the reforms and uplift projects of the government. There would be no compromise on the welfare, and rights of the people.
The Chief Minister on this occasion also sought progress report on the Swat Motorway project. He was informed that construction work was underway at various points on Swat motorway whereas full construction work would start in the first week of April this year. The Chief Minister urged them to complete the project in the stipulated time.
Earlier the meeting was briefed about three mega 520 Megawatt hydropower projects, construction of Cement Plant in Karak, and housing projects on GT Road and Motorway with the collaboration of the FWO.
Senior Minister for Irrigation Sikandar Hayat Khan Sherpao, Minister for Education Atif Khan, administrative secretaries of the concerned departments, Col Jamal Salman Qaisrani, representatives of the Oil and Gas Company and PEDO attended the meeting.
<><><><><><>

Handout No.2 Peshawar 16th March 2017

Chief Minister Khyber Pakhtunkhwa Pervez Khattak Thursday lauded the services of IGP Nasir Khan Durrani saying that his efforts have resulted in increasing professionalism and efficiency of police force.
Addressing a reception in honor of outgoing IGP, he said that his services for the force are a source of pride for the province and would be remembered in golden words. The reception among others was attended by Governor KP, Iqbal Zafar Jhagra, Chief Secretary Abid Saeed, secretaries of administrative departments and high level officials. He said that achievements of IGP in a short span of time were not only remarkable but unprecedented. He said that IGP has drawn praise of masses for his dedication and devotion.
Highlighting the accomplishments of provincial government on the occasion, he said that we succeeded in reforming public departments despite numerous challenges adding record improvement has been witnessed in sectors of education, police and health owing to our policies.
Chief Minister said that we have to devise a system to invite foreign investment in context of CPEC that would change the destiny of KP province and its people. He said that projects of Rs. 12 billion have been prepared with FWO while memorandums of understandings have been signed with Chinese companies.
Speaking on the occasion, IGP, Nasir Khan Durrani appreciated CM for devolving powers and said that it reflects the sincerity of CM to improve system and working of public departments.
<><><><><>

Handout No.3 Peshawar 16th March 2016

Chief Minister Khyber Pakhtunkhwa Pervez Khattak Thursday expressing satisfaction over upgradation of schools and directed authorities to ensure missing facilities in 28000 educational institutions till end of his government's tenure.
Presiding over a high level meeting at CM House here, he also directed authorities to award tenders of schools upgradation included in the second phase till July 31. The meeting among was attended by Provincial Education Minister Muhammad Atif Khan, Chief Strategic Support Unit Sahibzada Saeed concerned Secretaries and officials.
On the occasion, the meeting was briefed regarding recruitment of teachers, compulsory education bill, regulatory authority bill and the ongoing pace of repair and revamping work on schools.
It was told that 15297 among 28000 primary schools have been provided missing facilities in the first phase while 202 high and 199 higher secondary schools in 19 districts of the province would be upgraded.
Regarding regulations of private educational institutions, it was told that regulatory authority has been passed as an act on which implementation would start in May 2018.
Pervez Khattak expressed satisfaction over the ongoing project of schools upgradation and directed to further expedite the construction and revamping work. He also directed to devise a plan to initiate repair work on furniture in schools.
<><><><><><><><>

بہ تسلیمات پریس سیکرٹری برائے وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا
ہینڈ آؤٹ نمبر1پشاور16مارچ2017
وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے انسپکٹر جنرل پولیس ناصر خان درانی کی خدمات کو سراہتے ہوتے ہوئے کہاہے کہ انہوں نے کم وقت میں جتنی پذیرائی حاصل کی وہ حیرت انگیز ہے۔نا صر خان درانی کی خدما ت پر پورے صوبے کو فخر ہے ۔ ماضی میں پولیس کا برا حال تھا اور عوام کا پولیس سے اعتماد اُٹھ چکا تھا ۔گزشتہ تین سالوں میں حکومتی اصلاحات کی وجہ سے پولیس میں جو بہتری آئی اُس کا پورا پاکستان معترف ہے ۔ہم ناصر خان درانی کے جانے سے اُن کی کمی محسوس کریں گے ۔اُن کے مشوروں اور تجاویز کی آئندہ بھی ضرورت رہے گی ۔اُمید ہے کہ نئے آنے والے انسپکٹر جنرل بھی ناصر خان درانی کے کام کو آگے بڑھائیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سبکدوش ہونے والے انسپکٹر جنرل پولیس ناصر خان درانی کے اعزاز میں چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا عابد سعید کی طرف سے دیئے گئے الوادعی عشائیہ سے خطاب کر تے ہوئے کیا ۔گورنر خیبر پختونخوا ظفر اقبال جھگڑا، چیف سیکرٹری عابد سعید اور آئی جی پی ناصر خان درانی نے بھی عشائیہ سے خطاب کیا جبکہ صوبائی محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ تحریک انصاف کو عوام نے ووٹ اسلئے دیا تاکہ وہ ڈیلیور کرے ۔تحریک انصاف کی اتحادی حکومت نے شدید چیلنجز کے باوجود اداروں کی اصلاح اور سسٹم کو ٹھیک کرنے کیلئے اقدامات کئے ۔ہم وقت پاس کرنے کیلئے نہیں آئے ۔ہم نے اداروں کو ٹھیک کرنا ہے اور دُنیا کے مقابلے میں جانا ہے ۔ہم نے تعلیم، پولیس ، صحت اور دیگر شعبوں میں قابل عمل اصلاحات کے ذریعے بہتری لائی ہے۔اپنے سکاٹ لینڈ کے دورے کا حوالہ دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہاکہ ہمارا پولیس ایکٹ سکاٹ لینڈ کے پولیس ایکٹ سے بہتر ہے اور ہمارا لوکل گورنمنٹ ایکٹ لند ن کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ سے بہتر ہے ۔ہم فخر سے کہتے ہیں کہ ہم جو کچھ بھی کر رہے ہیں صحیح سمت میں جا رہے ہیں۔ ہم صرف آج کا نہیں بلکہ مستقبل کا بھی سوچتے ہیں۔ سی پیک کی وجہ سے مستقبل روشن ہے۔سی پیک کے تناظر میں ممکنہ سرمایہ کاری صوبے میں لانے کیلئے سسٹم بنانا ہے تاکہ ہم بھر پور فائدہ اُٹھا سکیں۔ صوبائی حکومت ایف ڈبلیو او کے ساتھ 12 بلین ڈالرز کے معاہدے تیار کر چکے ہیں۔ متعدد منصوبوں پر چینی سرمایہ کار کمپنیوں اور دیگر کے ساتھ مفاہمتی یاداشتوں پر دستخط ہو چکے ہیں۔ وزایراعلیٰ نے اس موقع پر سرکاری حکام سے کہا کہ وہ مثبت سوچ کے تحت سنجیدگی سے کام کریں ۔یہ ہمارا ملک ہے اس کو ٹھیک کرنا ہے ۔ناصر درانی نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اُن کی 35 سالہ سروس میں یہ ساڑھے تین سال یادگار ہیں۔وہ اﷲ تعالیٰ کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ جس نے اُنہیں محبتوں اور خلوص سے بھرے اس صوبے میں کام کرنے کا موقع دیا ۔صوبہ بھر سے جو اُنہیں عزت ملی وہ ان کی زندگی کا اثاثہ ہے ۔انہوں نے نظام کی بہتری کیلئے وزیراعلیٰ پرویز خٹک کی سوچ اور کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ نہ صرف اداروں کو آزاد کرنے کی خواہش رکھتے ہیں بلکہ برداشت بھی کرتے ہیں۔اس سیاست کا حصہ ہوتے ہوئے جس طرح انہوں نے اپنے اختیارات اداروں کو منتقل کئے وہ بے مثال ہے۔
َِِ<><><><><>
ہینڈ آوٹ نمبر۔2 ۔پشاور۔16مارچ2017 ء
وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے صوبے کے سرکاری سکولوں کی سٹینڈرڈائزیشن کے منصوبے کے تحت سکولوں کی تعمیر و مرمت، اپ گریڈیشن اور سہولیات کی فراہمی میں پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے منصوبے کے تحت دوسرے مرحلے میں شامل سکولوں کی تعمیر و اپ گریڈیشن کے منصوبوں کا ٹینڈر یکم جولائی تک ایوارڈ کرکے تعمیری کاتیز رفتاری سے مکمل کرنے جبکہ موجودہ حکومت کے اختتام تک صوبے کے تمام 28000سکولو ں میں missing facilitiesیقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ وہ وزیر اعلیٰ ہاؤس پشاور میں اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ صوبائی وزیر برائے تعلیم محمد عاطف خان، متعلقہ محکمہ کے انتظامی سیکرٹریوں ، سٹریٹیجک سپورٹ یونٹ کے سربراہ صاحبزادہ سعید اور دیگر اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کو سکول کی بنیاد پر اساتذہ کی بھرتیوں ، لازمی تعلیم بل، ریگولیٹری اتھارٹی بل، سکولوں کی تعمیر و مرمت اور سہولیات کی فراہمی میں پیش رفت پر بریفینگ دی گئی۔ بریفینگ میں بتایا گیا کہ سرکاری سکولوں میں missing facilitiesکی فراہمی کے حوالے سے بتایا گیا کہ پہلے مرحلے میں صوبے کے کل 28000 پرائمری سکولوں میں سے 15297 سکولوں کو سہولیات فراہم کی گئی ہیں مجموعی طور پر 25838 سہولیات میں سے 24042 سہولیات مکمل ہیں جن میں 10045 باؤنڈری وال، 5359 لیٹرین 3611 پانی کے کنکشن ،4260 اضافی کلاس رومز، 418سولر پینلز اور دیگر شامل ہیں۔ دوسرے مرحلے میں شامل 12637 سکولوں میں سے 77 میں سہولیات مکمل جبکہ 13011 میں فراہمی کا عمل جاری ہے جوحکومت کے اختتام تک مکمل ہوجائے گا۔ پہلے مرحلے میں شامل 3170 سرکاری سکولوں کو فرنیچر کی فراہمی کا عمل صوبے کے 23 اضلاع میں مکمل ہوچکا ہے جبکہ دو اضلاع میں تکمیل کے مراحل میں ہے۔ سکولوں میں سات لاکھ کرسیاں فراہم کی جا رہی ہیں جون تک تمام سکولوں کو فراہمی مکمل ہوجائے گی تا ہم کچھ حصہ پرائمری سکولوں کا رہ جا ئے گا جو آئندہ سال کریں گے۔ صوبے کے 19اضلاع میں202ہائی سکولوں کی تعمیر و اپ گریڈیشن کی جارہی ہے۔پہلے مرحلے میں 69سکولوں کے کنٹریکٹ ایوارڈ کئے گئے تھے جن میں سے 18مکمل اور 50تکمیل کے مراحل میں ہیں۔ دسمبر 2018تک تمام سکولوں پر کام مکمل ہو جائے گا۔ 199ہائر سیکنڈری سکولوں میں سے پہلے مرحلے میں شامل 72سکولوں میں سے 67پر کام شروع ہے۔ پانچ کیسز عدالت میں ہیں جبکہ دوسرے مرحلے میں شامل 127سکولوں پر کام جنوری 2018تک مکمل کر لیا جائے گا۔پرایؤیٹ تعلیمی اداروں کی ریگولیشن کے حوالے سے بتایا گیا کہ ریگولیٹری اتھارٹی بل بطور ایکٹ پاس ہو چکا ہے۔ آئندہ مئی میں اس پر عمل در آمد شروع کر دیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے سرکاری سکولوں کی بہتری کیلئے منصوبوں کی پیش رفت کو تسلی بخش قرار دیا اور ہدایت کی کہ جو منصوبے جاری ہیں اس پر کام کی رفتار مزید تیز کی جائے تاکہ حکومت کے خاتمے سے پہلے صوبے کے تمام سکولوں کا معیار سو فیصد یقینی بنایا جاسکے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ تمام اضلاع کے ای ڈی اوز سکولوں میں صفائی یقینی بنائیں۔ وزیراعلیٰ نے ہر سال سکولوں میں فرنیچر کو چیک کرنے اور فرنیچر کی مرمت کیلئے سسٹم وضع کرنے کی ہدایت کی۔
<><><><><><><>
ہینڈ آؤٹ نمبر3 پشاور16مارچ2017
وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے صوبے میں فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن کی معاونت سے پن بجلی ، سیمنٹ اورہاوسنگ کے منصوبوں کیلئے معاہدوں کو فوری طور پر حتمی شکل دینے کی ہدایت کی ہے اور عندیہ دیا کہ آئندہ پیر کو معاہدوں پر باضابطہ دستخط کریں گے ۔انہوں نے ہدایت کی کہ منصوبوں کی تعمیر کیلئے ٹائمز لائن کا تعین کیا جائے مقررہ وقت کے اندر تکمیل یقینی بنائی جائے ۔عوامی مفاد کے منصوبوں میں روکاوٹیں نہیں ہونی چاہئیں ۔ وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔سینئر صوبائی وزیر برائے اریگیشن سکندر حیات خان شیر پاؤ، صوبائی وزیر برائے توانائی وتعلیم محمد عاطف خان، وزیراعلیٰ کے معاونین خصوصی ڈاکٹر امجد ، عبد الکریم ، متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں ، کرنل جمال سلمان قیصرانی اور ازمک ، آئل اینڈ گیس کمپنی اور پیڈو کے اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔اجلاس میں فرنٹیر ورکس آرگنائزیشن کی معاونت سے تعمیر کئے جانے والے 520 میگاواٹ کے پن بجلی کے تین منصوبوں ، کرک میں سیمنٹ پلانٹ ، جی ٹی روڈ اور موٹروے پر ہاوسنگ سکیموں پر معاہدوں کی تیاری اور سوات موٹروے پر تعمیری کام کے حوالے سے بریفینگ دی گئی ۔وزیراعلیٰ نے پن بجلی ، سیمنٹ پلانٹ اور ہاوسنگ سکیموں پر معاہدوں کو حتمی شکل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ منصوبوں پر تعمیر ی کام بروقت شروع کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔اُن کی حکومت صوبے کو تیز رفتار ترقی پر ڈالنے کے عمل میں کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کرے گی ۔صوبے کا مستقبل تابناک ہے ۔سرمایہ کاری آرہی ہے ۔ کارخانے لگ رہے ہیں۔ روزگار کے وسیع مواقع پید ا ہوں گے ۔انہوں نے ہاوسنگ سکیموں میں عوامی مفاد کو مد نظر رکھنے کی ہدایت کی اور کہاکہ حکومت کے اصلاحاتی اقدامات اور ترقیاتی سکیموں کا مرکز و محور عوام ہیں ۔عوام کی فلاح و بہبود اور اُن کے حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر متعلقہ حکام سے سوات موٹروے کی تعمیر پر پیش رفت طلب کی جس پر بتایا گیا کہ سوات موٹروے کی تعمیر متعدد مقامات سے تیز رفتاری کے ساتھ جاری ہے ۔اپریل کے پہلے ہفتے میں ٹنل پر بھی کام شروع ہو جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے اس منصوبے کو مقررہ وقت کے اندر مکمل کرنے کی ہدایت کی ۔
<><><><><><><><><>

16-mar16-3-2017 CM and Governor Photos farewell dinner hosted by Chief Secretary for outgoing IGP and chairing a meeting regarding projects being implemented through Frontier Works Organization1

16-mar16-3-2017 CM and Governor Photos farewell dinner hosted by Chief Secretary for outgoing IGP and chairing a meeting regarding projects being implemented through Frontier Works Organization2

16-mar16-3-2017 CM and Governor Photos farewell dinner hosted by Chief Secretary for outgoing IGP and chairing a meeting regarding projects being implemented through Frontier Works Organization3

16-mar16-3-2017 CM Photo meeting Standardization of schools