Panama Case ka Faisla By Yar Muhammad Niazi

Created on Friday, 03 March 2017 12:27 | 907 Views
  • Print
  • Email

Panama Case ka Faisla By Yar Muhammad Niazi

آج پانامہ کیس کا فیصلہ جو بھی آئے لیکن صرف اس ایک کے سنے جانے سے مسلم لیگ ن سمیت حکومتی اداروں کے رویے اور کارکردگی پوری دنیا کے سامنے کھل کر سامنے آگئی ہے اور یہ بات پورے وثوق سے ثابت ہوچکی ہے کہ حکمران طبقے نے اپنے ذاتی مفادات کے حصول کیلئے تمام اداروں کا جنازہ نکال دیا ہے اور سیاست جسکو کبھی عبادت سمجھا جاتا تھا کو پیسے اور طاقت کا کھیل بنا دیا ہے.

اب ذرا تصور کریں کہ اگر پچھلے تیس سال کے تمام کیسز کی دوبارہ صحیح طریقے سے تحقیقات کی جائے تو کیا کیا سامنے آسکتا ہے. سب معلوم ہوجائے گا کہ اس پیارے ملک پاکستان کو کس کس نے اپنے ذاتی مفادات کے حصول کیلئے اس ملک کے قانون اور اداروں کا بیڑا غرق کیا اور کیسے کک پتی سے ارب پتی بنے. سیاستدانوں نے اپنے ذاتی فوائد کیلئے مختلف نعرے لگائے کوئی روٹی کپڑا مکان کے نعرے لگاتا رہا. کوئی شریعت نافذ کرنے کے دعوے کے نام پر ملک کو لوٹتا رہا. کسی نے قومیت کے نام پر ووٹ اور اقتدار کے مزے لوٹے.

ابھی تک کسی کا احتساب نہیں ہوا. آج اگر سپریم کورٹ نواز شریف کو نااہل کرتی ہے تو پاکستان میں ایک نئی صبح کا آغاز ہوسکتا ہے. اس ملک کا سب سے بڑا مسئلہ یہ اشرافیہ جو اصل میں بدماشیہ ہے.انہوں نے اپنی مفادات کی خاطر تمام محکموں کو تباہ وبرباد کردیا ہے. عوام کو سب معلوم ہے لیکن عوام جھوٹے نعروں پر پھر بھی یقین کرتی ہے اور ان غنڈوں اور بدمعاشوں کو اسمبلی پہنچا کر بعد میں واویلا مچاتے ہیں.

جب تک اس ملک میں الیکشن اصلاحات نہیں کیئے جاتے, کرپشن کے خلاف بھرپور کاروائی نہیں کی جاتی, عوام کو فوری انصاف کی فراہمی کیلئے طریقہ کار واضح نہیں کیا جاتا یہ ملک اور اسکے سیاستدان یونہی اس ملک کو کوکھلا کرتے رہینگے اور عوام یونہی پستی رہے گی. سیاستدانوں کو مورد الزام ٹھرایا جاتا ہے تو وہ کہتے ہیں کہ ہمیں بیوروکریسی, فوج اور دیگر ادارے کام نہیں کرنے دیتے اور یہ بھی کہتے ہیں کہ کیا صرف ہم سیاستدان ہی کرپٹ ہیں کیا بیوروکریسی یا فوج کرپٹ نہیں ہیں.میرا ان سے سوال ہے کہ یہ کیوں کرپٹ بنے اسلئے کہ آپ لوگوں کو کرپشن میں ملوث دیکھ کر ان لوگوں نے بھی کرپشن شروع کردی. کیا سیاستدان صرف بیانات دیتے رہینگے اور پرنس کانفرینسیز کرتے رہینگے. ہمیں بتایا جائے کہ پچھلے تیس سالوں میں کونسے ایسے قوانین متعارف کرائے گئے جس سے عوام اور اس ملک کو فائدہ پہنچایا گیا ہو. ہاں ایسے بہت سارے قوانین پاس کیئے گئے ہیں جسکے ذریعے کالے دھن کو سفید اور اپنے گناہ چپھانے کا ذریعہ بنایا گیا ہے. لیکن اب بھی وقت ہے کہ ہم اس ملک کو بچا سکتے ہیں لیکن اسکے لئے ہم عوام کو سوچھنا سمجھنا ہوگا اور تمام کرپٹ سیاستدانوں کو انکی اصل اوقات دکھانی ہوگی. ہم تمام پاکستانیوں نے ملکر یہ کام کرنا ہوگا. اب بہت ہوچکا اب ہمیں صرف پاکستانی بن کر آگے بڑھنا ہوگا کیونکہ سیاستدانوں نے اپنے ذاتی مفادات کیلئے ہمیں آپس میں بہت لڑا لیا کبھی مسلک کے نام پر, کبھی فرقہ کے نام اور کبھی لسانیت کے نام پر. لیکن اب ہمیں ایک بن کر صرف پاکستان کو آگے بڑھانا ہے تاکہ یہ کرپٹ سیاستدان مذید چورن نا بیچ سکیں.

اللہ تمام پاکستانیوں کا حامی و ناصر ہو. امین

پاکستان زندہ باد

بقلم خود. یار محمد خان نیازی